سکورٹی اداروں میں بغاوت: محسود سکاوٹس کے 23 اہلکاروں نے احتجاجا استفعی دے دیا ہے

پاکستان کے زیرانتظام قبائلی علاقوں میں طالبان کو مسلح کرکے ازسرنو منظم کرنے کے عمل کے خلاف محسود سکاوٹس کے 23 اہلکاروں نے احتجاجا استفعی دے دیا ہے

 

زرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ اہلکاروں میں ایک صوبیدار چار حولدار سات لانس نائیکس اور گیارہ سپاہی شامل ہیں. محسود سکاوٹس کے ذرائع نے نام نہ بتانے کی شرط پر بتایا ہے کہ مقامی اہلکاروں میں عرصہ دراز سے تشویش پائی جاتی ہے کہ پاکستان آرمی کے افسران اور خفیہ ادارے دہشت گردوں کی نہ صرف پشت پناہی کررتے ہوئے ان کو مسلح کرتے ہیں بلکہ ان دہشت گردوں کے خلاف اٹھنے والی عام قبائلی کی آواز کو بھی جبر کے ساتھ دباتے ہیں. وزیرستان کے مختلف علاقوں میں امن کمیٹیوں کے نام پر انہیں دہشت گردوں کو دوبارہ منظم کردیا گیا ہے جن میں کمانڈر ملا عابد الرحمان، صادق نور، حافظ گل بہادر اور منگل باغ شامل ہیں. ان کا کہنا ہے کہ ان کو سرکاری اسلحہ دیا گیا ہے اور کسی کو بھی ٹارگٹ کرکے قتل کرنے کی کھلی آزادی دی گئی ہے. ذرائع نے مذید بتایا ہے کہ اہلکاروں نے اپنے استفعی کی وجوہات بیان کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشت گردی اور اس کےخلاف نام نہاد فوجی آپریشن میں پر ریاستی ادارے ان کی اور ان کے لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ کھیل رہے ہیں.اس سے قبل خیبر ایجنسی کے علاقہ باڑہ میں افریدی قبائل پر مشتمل ہزاروں لوگوں نے ریاستی اداروں کے خلاف مظاہرہ کیا. مظاہرین کا کہنا تھا کہ اسی منگل باغ کو دوبارہ لایا گیا ہے جس کے خلاف آپریشن کے نام پر لاکھوں لوگوں کو بے گھر کیا گیا. ان کا کہنا تھا کہ اگر ان دہشت گردوں کی سرپرستی افواج پاکستان چھوڑ دیں تو افریدی قبائل دودن کے اندر اندر ان کا مکمل صفایا کرسکتے ہیں. مظاہرے سے مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عام قبائلوں سے اسلحہ لے کر ان کے مقابلے میں دہشت گردوں کو جدید اسلحے سے فوج نے لیس کردیا ہے اور وہ جب چاہیں جس کو چاہیں قتل کرتے ہیں، مشران کا کہنا تھا کہ فوج نے ماضی میں الشمس اور البدر جیسی دہشت گرد تنطیمیں بنا کر بنگالیوں کا بھی ایسی طرح قتل عام کروایا تھا. یاد رہے وزیرستان کے علاقے میرعلی اور میں ہزاروں قبائل افواج پاکستان کا دہشت گردوں کی پشت پناہی اور اس کے نتیجے میں قبائیلوں کی ٹارگٹ کیلنگ کے خلاف پچھلے کئی دنوں سے دھرنا دئیے ہوئے ہیں. انکا کہنا ہے کہ فوج طالبان کے ذریعے ان کی ٹارگٹ کیلنگ میں مصروف ہے اور پچھلے ایک ماہ کے دوران 12 قبائیلوں کو حکومت کے اچھے طالبان نے ٹارگٹ کرکے قتل کیا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*