بنوں قبائلی جرگہ: فاٹا کو خیبر پختون خواہ میں شامل کرنے کا مطالبہ

B1

بنوں(وسیم باغی سے) اتمانزئی شمالی وزیرستان،سیاسی اتحاد،سیاسی یوتھ اور یوتھ آف وزیرستان کے ساتھ فاٹا اصلاحات کیلئے قائم وفاقی کمیٹی نے ایک اہم جرگہ کیا۔ جس میں وفاقی کمیٹی کے ممبران مشیر خارجہ سرتاج عزیز، وفاقی وزیر برائے سیفران عبد القادر بلوچ، گورنر خیبر پختون خواہ مہتاب احمد خان عباسی،خامد رضا، اعلیٰ فوجی حکام ،محکمہ جات کے سیکرٹریز ،ممبر قومی اسمبلی شمالی وزیرستان اور پولیٹیکل ایجنٹ شمالی وزیرستان کامران آفریدی نے شرکت کی۔جرگہ سے خطاب کرتے ہُوئے گورنر خیبر پختونخوا مہتاب خان عباسی نے کہا کہ شمالی وزیرستا ن سمیت فاٹا کے 70لاکھ قبائلی عوام نے حکومت اور پاک فوج کا ساتھ دیکر ملک کو بچانے میں اہم قربانی دی ہے جس کو کسی صورت میں ضائع نہیں کرینگے بلکہ فاٹا کے آنے والی نسل کو ہر لحاظ سے روشن،پر امن اور خوشحال مستقبل حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ فاٹا کے بچوں کا مستقبل ہر صورت میں محفوظ بنا ئیں گے خواہ وہ سیاسی لحاظ سے ہو یا امن کے لحاظ سے۔اُنہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہدری میں فاٹا کو بھی شامل کیا جائے گا۔جرگہ سے مشیر خارجہ پاکستان سرتاج عزیز نے بھی خطاب کیا۔اُنہوں نے کہا کہ ہم کسی مخصوص طبقے کی نہیں بلکہ فاٹا کے عوام اکثریتی رائے لیکر وفاقی حکومت کو پہنچا ئینگے۔ جس کے بعد فاٹا میں مثبت تبدیلی کیلئے پالیسی بنا ئیں گے۔اُنہوں نے کہا کہ فاٹا اصلاحات پر 70لاکھ قبائلی عوام کے رائے کو وفاقی حکومت کے سامنے رکھ کر تبدیلی کے لئے پالیسی بنائیں گے۔جرگے کے دوران سیاسی اتحاد اور یوتھ آف شمالی وزیرستان نے احتجاجً کرتے ہُوئے گو ایف سی آر گو کے شدید نعرے بازی کی جس سے منعقدہ جرگہ میں کچھ بد نظمی آئی لیکن جلد ہی سیاسی اتحاد اور یوتھ آف وزیرستان سمیت سماجی رہنماؤں، صحافی برادری اور تاجر برادری کے ساتھ کمیٹی نے علیحدہ سوال و جواب کیا جس میں تمام مکاتب فکر کے لوگوں نے ایف سی آر کو ظالمانہ قانون قرار دیکر مکمل خاتمے اور فاٹا کو خیبر پختون خواہ میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا۔قبائلی مشران ملک خان مرجان ،ملک ربنواز خان ،مولانا محمد عالم ،سیاسی پارٹیوں کی جانب سے ضیاء الرحمان ،گل بہادر ،ملک غلام خان نثار علی خان ،عبدالخلیل،ملک اکبر خان ،امشاد اللہ ،نظر دین،اسد اللہ و دیگر نے فاٹا اصلاحات کے بارے میں تجاویذ دی۔اُن کا کہنا تھاکہ اصلاحات ہم بھی چاہتے ہیں لیکن سب سے پہلے فاٹا اور حصوصاً شمالی وزیر ستان کے آئی ڈی پیز کو جلد سے جلد اپنے علاقوں میں واپس کیا جائے اور گھروں،بازروں کے نقصانات کا معاوضہ بلا تاخیر دیا جائے بعد میں فاٹا اصلاحات کیلئے عوامی رائے طلب کئے جائے۔اس موقع پر مشران کے پر زور مطا لبے پر گورنر نے افعانستان جانے والے ہزاروں لوگوں کو واپس لانے کیلئے پولیٹیکل ایجنٹس شمالی وزیرستان کو کردار ادا کرنے کیلئے کمیٹی بنانے کی ہدایت بھی جاری کی کیونکہ وہاں پر ان لوگوں کی پاکستان مخالف ذہن سازی کا شدید خطرہ ہے۔

From our correspondent Wasim Baghi

THE PASHTUN TIMES

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*